نقطعہ نظر۔۔تحریر : شفاعت ملک

نقطعہ نظر۔۔تحریر : شفاعت ملک

آخر کا رپلاسٹک بیگز کے استعمال کے خلاف اقدامات اٹھانے کی تیاریاں شروع ہو رہی ہیں۔ ہم لوگ اس کے خلاف سالوں سے نہ صرف لکھ رہے تھے بلکہ آگاہی مہم بھی چلا رہے تھے۔ اس ضمن میں سپرنگ فیلڈ تلہ گنگ نے 1999میں آگاہی مہم چلائی تھی اس زمانے میں شہر کے اہم افراد کو ساتھ لیکر صفائی کے موضوعات پر مباحثے بھی کرائے گئے تھے واک کا بندوبست بھی کیا گیا تھا۔ اس وقت بھی مدعا یہ تھا کہ عوامی شمولیت اور آگاہی کے بغیر ان معاملات کو بہتر نہیں بنایا جا سکتا۔ اب حکومت اس ضمن میں قوانین تو بنا رہی ہے مگر ابھی تک آگاہی اور عوامی شمولیت جیسے اہم معاملات پر کوئی تو جہ نہیں ہے۔ حالات تو اس حد تک بگڑ چکے ہیں کہ عوام کو آگاہی دینے کی کاوشیں تو دور کی بات حکومتی افسران کو خود پتہ نہیں ہوتا کہ کونسا کام کس ادارے کی ذمہ داری ہے ۔ جیسے اکثر سکولوں کی مانیٹرنگ کر نے والے سکولوں کے باہر موجود گندگی کے ڈھیروں کو ختم کر نے کا ٹاسک سکولوں کو دیکر چلے جاتے ہیں ۔ صفائی کے ذمہ دار اداروں کو گزراش کرنے کے بجائے سکول کے عملے کو اس کا ذمہ دار بنا دیا جاتا ہے۔ ویسے مانیٹرنگ کا محکمہ پتہ نہیں کس صاحب بہادر کے دماغ کی اختراع تھا۔ جس کی آج تک سمجھ نہ آسکی۔ مختلف سروے ٹیمیں آج کل گھروں میں جا کر معلومات اکٹھی کر رہی ہیں۔ جو کہ اچھا عمل ہے بغیر ڈیٹا اکٹھا کئے بہتر منصوبہ بندی نہیں کی جاسکتی۔ مگر ڈینگی سروے کر نے والی ٹیمیں گھروں میں جا کر دیگر معلومات کے ساتھ ساتھ موبائل نمبر ز اور ایسی معلومات بھی اکٹھی کررہی ہیں جو کہ ڈینگی کے حوالے سے مطابقت نہیں ر کھتیں ۔ جو کہ سمجھ سے باہر ہے۔ ہمارا ذاتی ڈیتا ان کے ہاتھوں کتنا محفوظ ہو گا اس کی کیا گارنٹی ہے۔ جو لوگ سروے فارمز ڈیزائن کر رہے ہیں یاان سرویز کو کروارہے ہیں ان کوان فامرز میں صرف ضروری معلومات ہی پو چھنی چاہیں۔ ترقی یافتہ ممالک میں کوئی اپنا ذاتی ڈیٹا فراہم نہیں کرتا اور اگر کرتا بھی ہے تو ڈیٹا پروٹیکشن ایکٹ ان کی ذاتی معلومات کے تحفظ کا ضامن ہو تا ہے مگر ہمارے ہاں تو معاملہ ہی الگ ہے۔ واپس پلاسٹک بیگز کی طرف آتے ہیں۔ یہ بیگز ہمارے موحول کو کسی نہ کسی طرح 300سالوں تک اثر انداز کرتے ہیں اور ماحولیاتی آلودگی کا سبب بنتے رہتے ہیں۔ کاغذ یا کپڑے کے تھیلے جو ہماری زندگیوں کا ایک عرصے تک حصہ رہے ہیں ان کو واپس لانا ہو گا۔ Say No to Plastic Bags کا نعرہ ہی ہمارا ماحول صاف رکھے گا اور صاف ستھرا معاشرہ تشکیل دینے میں ممد و معاون ہو گا۔ اﷲتعالی ہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں اور ہم سب کے حامی و ناصر ہوں۔ آمین