زخمی رکشہ ڈرائیور تین ماہ بعد خالق حقیقی سے جا ملا ،سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں سپرد خاک ۔

زخمی رکشہ ڈرائیور تین ماہ بعد خالق حقیقی سے جا ملا ،سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں سپرد خاک ۔

تلہ گنگ ( نمائندہ بول تلہ گنگ) تلہ گنگ چکوال روڈ پر رکشہ اور مسافر بس میں تصادم کے نتیجے میں زخمی ہونے والا رکشہ ڈرائیو راکلوتا بیٹا 30سالہ شاہد اقبال ولد ظفر اقبال تین ماہ تک بستر علالت پر رہنے کے بعد خالق حقیقی سے جا ملا – اس حادثہ میں ایک خاتوں اور ایک بچہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے تھے جبکہ شاہد اقبال اور ملک جاوید حسین زخمی ہو گئے تھے جن میں شاہد اقبال کی حالت نازک تھی شاہد اقبال کو سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں آبائی قبرستان نکہ کہوٹ میں سپرد خاک کر دیا گیا -مرحوم نے لواحقین میں ایک بیٹا اور بیوہ چھوڑی ہے -شاہد اقبال کی وفات پر سید ارشاد حسین شاہ کاظمی چئیرمین تلہ گنگ پریس کلب الیکٹرانک میڈیا ،ملک ارشد گٹال سماجی کارکن نکہ کہوٹ ،ملک رشید احمد ،ملک یاسر عرفات ، سابق چئیرمین ملک عبدالمنان۔ سابق کونسلرزملک فرید احمد گٹال، ملک مسعود احمد گوندل ،سماجی کارکن انگلینڈملک سہیل ، سماجی کارکن دوبئی ملک رواف بھٹی ، ملک فتح محمد ، ملک ریاض قدیر سابق نائب ناظم۔ نمبردار غلام حسین ، ملک ظہور احمد ،ملک منظور احمد مٹھائی والے ،استاد سلیم حسین، پٹواری ارشد حسین، شاہد رسول ملک۔ملک لطیف ،نمبردار محمد اقبال حسرت ، حاجی محمد اکرم ، حاجی محمد امین، مولانا محمود احمد، مولانا عامر محمود گوندل اورسیکرٹری یونین کونسل نکہ کہوٹ ملک اکمل خان نے لواحقین سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا ہے اورمرحوم کے بلند درجات کی دعا کی ہے –