مسلم لیگ ن کی قیادت نے صحت کے شعبہ میں بے پناہ کام کیا تھا لیکن اب ہماری محنت پر پانی پھیرا جا رہا ہے عوام سے طبی سہولیات چھیننے والوں کو حساب دینا ہو گا ۔شہریار اعوان

مسلم لیگ ن کی قیادت نے صحت کے شعبہ میں بے پناہ کام کیا تھا لیکن اب ہماری محنت پر پانی پھیرا جا رہا ہے عوام سے طبی سہولیات چھیننے والوں کو حساب دینا ہو گا ۔شہریار اعوان

تلہ گنگ (نامہ نگار ) ڈپٹی کمشنر چکوال کے سرکاری ہسپتالوں کے مختلف شعبوں کو ضم کرنے کے نوٹیفکیشن نے ہلچل مچا دی ،اپوزیشن اور عوام کی جانب سے سخت رد عمل ۔نوٹیفکیشن کے مطابق ٹی ایچ کیو ہسپتال میں گائنی ڈیپارٹمنٹ ،چلڈرن ،ڈینٹل ،آ ئی ڈیپارٹمنٹ اور پوسٹمارٹم ہوں گے اور سٹی ہسپتال میں ایمرجنسی ،میڈیکو لیگل ،میڈیکل ڈیپارٹمنٹ ،ای این ٹی ،سرجیکل اور حفاظتی سروسز کے شعبہ جات ہوں گے ۔عوامی حلقوں کی جانب سے کہا گیا ہے کہ حکمران جماعت کی ایماءپر ہونے والے نوٹیفکیشن نے سرکاری ہسپتالوں کو آ دھا تیتر اور آ دھا بیٹرکر دیا ہے اور ٹی ایچ کیوہسپتال میں ایمرجنسی مریضوں کیلئے سہولیات ختم کر کے ایمرجنسی مریضوں کو موت کے منہ میں دھکیل دیا گیا ہے ۔سرجیکل،میڈیکل اور ویکسینیشن ڈیپارٹمنٹ سے بھی محروم کر دیا گیا ہے۔سابق رکن صوبائی اسمبلی شہریار اعوان نے سرکاری ہسپتالوں کے شعبوں کو ضم کرنے کے نوٹیفکیشن پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ ٹی ایچ کیوہسپتال سے ایمرجنسی کا ختم کرنا مریضوں کےساتھ زیادتی ہے اور ہم اسکی پرزور الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اس فیصلے کیخلاف ہم بھر پور مقدمہ لڑیں گے اسکو ہم تسلیم نہیں کر تے ،تبدیلی سرکار نے عوام سے اب طبی سہولیات بھی چھیننا شروع کر دی ہیں ۔ملک شہریار اعوان نے مزید کہا کہ مسلم لیگ ن کی قیادت نے صحت کے شعبہ میں بے پناہ کام کیا تھا لیکن اب ہماری محنت پر پانی پھیرا جا رہا ہے عوام سے طبی سہولیات چھیننے والوں کو حساب دینا ہو گا اور سرکاری ہسپتالوں میں جن شعبہ کی کمی تھی انکو پورا کیا جاتا ہے لیکن تبدیلی سرکار کی عجیب منطق سمجھ سے بالا تر ہے کہ جو سہولیات ہم نے عوام کو دی تھی اسکو دوسرے ہسپتال میں منتقل کر کے ٹوپی ڈرامہ اور مریضوں کیساتھ کھلواڑ کیا جا رہا ہے اور ٹی ایچ کیو ہسپتال سے منتقل کیے گئے شعبوں کو بحال کرنے تک ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔