نئے بلدیاتی نظام کی آ مد ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

نئے بلدیاتی نظام کی آ مد ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

نئے بلدیاتی نظام کی آمدآمد ہے۔تحصیل سطح پر اختیارات منتقل کئے جارہے ہیں۔ جوکہ بظاہر اچھا لگ رہا ہے مگر سوال یہ ہے کہ کیا تحصیل سطح پر اتنی صلاحیت بھی ہو گی کہ اچانک اتنے سارے اختیارات سنبھال سکیں، کیا اتنی افرادی قوت اور پروفیشنل افراد موجو د ہو نگے، کیا بیورو کریسی اپنے اختیارات کسی اور کو دینے پر تیار ہو گی۔ ابھی تک 2019کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ کو مکمل تفصیل سے پڑھ نہیں سکا تو تفیصلات دینے سے قاصر ہوں مگر سوالیہ نشان بہت ہونگے۔ نئی مقامی حکومت کو تو پہلے چار سال نظام اور اپنے اختیارات کوسمجھنے میں لگ جائیں گے اور جن تحصیلوں میں پڑھے لکھے تجربہ کا ر لوگ نہ آسکے تو ان کا کافی نقصان ہوگا۔ اور اگر آنیوالے قومی انتخابات میں کوئی اور حکومت آگئی تو عین ممکن ہے کہ وہ اس نظام کوتبدیل کر کے اپنا نیا نظام متعارف کروادیں۔ ہماری تاریخ کچھ اس طرح کی ہی رہی ہے۔ میں نے ہمیشہ سے ہی اپنی تحریوں میں مایوسی کو گھسنے نہیں دیا مگر یہ کچھ خدشات ہیں جو ماضی کے تجربوں سے پیدا ہورہے ہیں۔ ہمارے ہاں سرکاری اداروں میں Capacity building کی طرف توجہ بہت کم دی جاتی رہی ہے جس کی وجہ سے اکثرمسائل اور خدشات جنم لیتے ہیں۔ TMA’sوالا نظام بھی برا نہیں تھا مگر صاحب بہادروں نے اپنے اختیارات منتقل ہو نے کی وجہ سے اس نظام کو پنپنے نہیں دیا اور کئی مسائل نے جنم لیا۔ اس دفعہ امید کی جا سکتی ہے کہ تما م خدشات کا سد باب کیا جائے گا اور ایک بہترین تیاری کے ساتھ نئے نظام کو لایا جائے گا۔ مگر ماضی کے تجربے کوئی اور ہی کہانی بتاتے ہیں۔ موجودہ بلدیاتی نظام جو اپنی آخری سانسیں لے رہا ہے ۔ اس کی کارکردگی خاطر خواہ نہ رہ سکی اور اس کی ایک بڑی وجہ سابقہ صوبائی حکومت تھی جس نے بلدیاتی اداروں کو کوئی خاص اہمیت ہی نہیں دی اور شاید وہ تو بلدیاتی انتخابات بھی نہ کرواتے مگر عدالتی احکامات کی وجہ سے ان کی ایک نہ چلی۔ نئے نظام میں ویلج کونسلز اور نیبر ہڈ کونسلز کی حلقہ بندیاں بھی ایک پنڈورا بکس کھولیں گی۔ میونسپل کمیٹیوں کا دائرہ کار کیا ہو گا ، فنڈز کی ترسیل کیسے ہو گی اور تحصیل کونسل کی موجودگی میں میونسپل کمیٹیاںکیسے کام کریں گی۔ بڑی میونسپل کمیٹیاں تو شاید کام چلا لیں مگر تلہ گنگ جیسی چھوٹی میونسپل کمیٹیاں مشکلات کا شکار رہیں گی۔ نئے ایکٹ کی تفصیلات انشااﷲ اگلے کالم میں پیش کروں گا ۔اﷲتعالی ہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں ا ور ہم سب کے حامی و ناصر ہوں۔ آمین