میونسپل کمیٹی افسران توجہ دیں ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

میونسپل کمیٹی افسران توجہ دیں ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

پورے ملک کی طرح تلہ گنگ میں بھی حکومتی وسائل لگا کر منصوبے تو لگا دیئے جاتے ہیں مگر بعد میں مناسب دیکھ بھال نہ ہو نے کی وجہ سے سب ضائع ہو جاتا ہے۔ تلہ گنگ کی مرکزی شاہراہ پر گزشتہ کئی سالوں سے لاکھوں روپے تزئین و آرائش کے نام پرخرچ کئے گئے مگر کچھ عرصہ بعد ہی سب ختم ۔ وجہ وہ ہی ہے ،مناسب دیکھ بھال کا نہ ہونا۔ ایک وقت میں سڑک کے درمیانی حصے میں گملے رکھے گئے اور ان میں پودے لگا ئے گئے مگر سوائے بارشوں کے ان پودوں کے حصے میں پانی نہ آیا اور کچھ ہی عرصے میں وہ سب مرجھا گئے اور گملے آہستہ آستہ کچرے کے لئے استعمال ہو نے لگے۔ اب بھی مرکزی شاہراہ پر کہیں کہیں پودے موجود ہیں مگر پانی میسر نہ ہو نے کی وجہ سے ان میں زردی آچکی ہے جو جلد ہی ان کے خاتمے کا باعث بن جائے گی۔ مقامی حکومت کے پاس جو سہولیات موجود ہیں ان کا استعما ل کر کے ان پودوں کو پانی دیا جانا چاہیئے۔ ویسے ©© “چاہئے” بھی کمال کا لفظ ہے جس کا استعما ل ہم ہمیشہ ہی دوسروں کے لئے کرتے ہیں۔ ہمیں خود بھی تو کچھ کرنا چاہیئے۔ جیسے کہ اگر ہمارے گھر یا دکان کے سامنے کوئی ایسا کام حکومتی پیسے سے کیا جاچکا ہے اور مناسب دیکھ بھال نہ ہونے کی وجہ نقصان ہو رہا ہے تو ہمیں اس کا خیال رکھنا ©”چاہیئے”۔ پودوں اور درختوں کو پانی دیا جا سکتا ہے اور دیگر چیزوں کا خٰیال رکھا جا سکتا ہے۔ حکومتی پیسے کو اپنا پیسہ سمجھنا پڑے گا اور دوسروں کو “چاہیے”کہنے کے بجائے اپنی ذمہ داری کا احساس کرنا “چاہیئے”۔ ایک پرانے صاحب بہادر کے اکثر کاموں پر ان کے دور حکومت سے تنقید کرتا آیا ہوں ۔ مگر ان کے زمانے میں پرانے لاری اڈے اور عید گاہ کے پاس گھاس اور پھول لگائے گئے تھے جو کہ ایک اچھا عمل تھا مگر وہ ہی ہوا ، دیکھ بھال نہ ہونے کی وجہ سے سب ضائع۔ مگر سوچنا یہ ہے کہ اگر مقامی حکومت نے توجہ نہ دی تو ہماری ذمہ داری بھی تو ہے ناں۔آس پاس میں رہنے والے اور قریبی دکان داروں کی ذرا سی توجہ سے وہ سبزہ آج بھی موجود ہوتا ۔ پرانے لاری اڈے کے پاس پارک کے باہر کی جگہ دوبارہ ٹیکسی اسٹینڈ بن چکا ہے جس کی وجہ سے سڑک کا ایک اچھا خاصہ حصہ ناقابل استعمال ہے۔ دنیا میں کوئی بھی ادارہ عوام کی مدد کے بغیر کام نہیں کر سکتا۔ اور ہمارے ادارے تو ویسے بھی کام کرنے کو تیار نہیں تو ہماری ذمہ داری ذرا بڑھ جاتی ہے۔ کوشش کر نے میں کوئی حرج نہیں اور نہ ہی کوئی خرچ آتا ہے۔ اﷲ ہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں اور ہم سب کے حامی و ناصر ہوں۔ آمین۔