انتظامیہ ناکام ۔۔۔بے ہنگم ٹریفک کاراج۔تحریر : شفاعت ملک

انتظامیہ ناکام ۔۔۔بے ہنگم ٹریفک کاراج۔تحریر : شفاعت ملک

تلہ گنگ شہر میں باقی مسائل کے ساتھ ساتھ ٹریفک کے مسائل میں بے پناہ اضافہ دیکھنے میںآرہاہے۔ نادرا آفس سے لیکر صدیق آباد چوک تک سڑک کے دونوں اطراف میں بے ہنگم پارکنگ نے شہریوں کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔ٹریفک پولیس کی عدم موجودگی، ریڑھیوں اور ٹھیلوں کی بہتات حکومتی عدم دلچسپی کا ثبوت ہے۔ کچھ سال پہلے ایک صاحب بہادر نے تجاوزات کی آڑ میں اپنی انا کو جلا بخشی مگر مناسب منصوبہ بندی نہ ہونے کی بنا پر شہر کا حشر کردیا جسکی سزا تلہ گنگ کے عوام آج بھی بھگت رہے ہیں۔ عوامی نمائندوں کی عدم دلچسپی کی بدولت شہر کی گلیاں ، نالیاں اور سڑکیں تباہی کی تصویر بن چکی ہیں۔ شہر کے واحد پارک کی صورتحال بھی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں۔ مقامی حکومت کے ساتھ ساتھ مقامی ممبر قومی اسمبلی اور ممبر صوبائی اسمبلی بھی شہر کے مسائل کے حل کے لئے کوشاں نظر نہیں آتے۔ ٹریفک کے مسائل کوتو ذرا سی دلچسپی لینے سے حل کیا جاسکتا ہے۔ٹریفک پولیس کے اہلکاروںکی تعداد اگرچہ کم ہے مگر رضا کاروں کی مدد سے تعداد کی کمی کوپور اکیا جاسکتا ہے۔مقامی حکومت مخیرحضرات کی مدد سے فنڈزکابندوبست کر سکتی ہے۔ جس سے ان رضا کاروں کی تنخواہ ادا کی جا سکتی ہے۔ تلہ گنگ میںایسے لوگوں کی کمی نہیں جو شہر کے حالات کی بہتری میں اپنا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں بس ایسے لوگوں تک جانے کی ضرورت ہے اور یہ کام مقامی حکومت بہتر انداز میں سر انجام دے سکتی ہے۔ مقامی قومی اور صوبائی اسمبلی کے ممبران پر بھی عوامی دباﺅ بڑھانے کی اشد ضرورت ہے جس سلسلے میں عوام کوبھی اپنا کردار ادا کرنا پڑے گا۔
آخر میں ، میں ان تمام احباب کاتہہ دل سے شکر گذار ہوں جنہوں نے میرے والد صاحب کی وفات پر میرے دکھ میںشرکت کی۔ اﷲتعالی تمام مسلمانوں کی مغفرت فرمائیں۔ اور ہم سب کے لئے آسانیاں پید ا کریں۔آمین۔