میونسپل کمیٹی ذمہ داریاں نبھانے میں تاحال ناکام۔۔۔تحریر :شفاعت ملک

میونسپل کمیٹی ذمہ داریاں نبھانے میں تاحال ناکام۔۔۔تحریر :شفاعت ملک

سب اچھا ہو گا ، مسائل ختم ہوں گے اور تلہ گنگ ماڈل شہر بنے گا ایسے خواب دکھائے گئے تھے۔ مقامی حکومت کو بنے ایک عرصہ ہو چلا مگرمعاملات جوں کے توں ہی چل رہے ہیں۔ شہر جیسا تاریک تھا ویسا ہی ہے۔ گلیوں نالیوںکی صورتحال میں کوئی تبدیلی نہیں۔تجاوزات کا راج پہلے بھی تھا اور آج بھی ہے۔ صفائی کے معاملات میں کسی حد تک تبدیلی کا کہا جا سکتا ہے۔ مگر شہر کو رہنے کے لئے اچھی جگہ بنانے کاخواب ابھی تک پایہ تکمیل تک پہنچنے سے کافی دور ہے۔ایک طرف کونسلرز سرکاری افسران کی ذمہ داریاں نبھانے کے کوششوں میں ہیں تو دوسری طرف میونسپل کمیٹی کے سامنے سے لیکر صدیق آباد چوک تک سڑک کے دونوں طرف تجاوزات کا جو عالم اب ہے پہلے کبھی نہ تھا۔مقامی حکومت کی طرف سے سابقہ صوبائی حکومت کو وسائل کی فراہمی کو لیکر ہمیشہ ہی تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا مگر اب تو صورتحال مختلف ہے۔موجودہ صوبائی حکومت کی طرف سے بھی عدم دلچسپی کا مظاہرہ ہی دیکھنے میں آرہاہے۔شہر کے مسائل کے حل کے لئے تمام مکتبہ فکر کو اکٹھا بٹھا کر منصوبہ بندی کر نے کی ضرورت جتنی اب ہے پہلے کبھی نہ تھی۔ وسائل کی فراہمی کی کوششیں اپنی جگہ اہم سہی، مگر پہلے پتا تو ہو کہ کرنا کیا ہے ِ ترجیحات کیا ہیں۔ سرکاری افسران جن کے کرنے کے یہ کام ہیں وہ تو اپنا کام کر نہیں رہے تو ۔۔شہر تو آخر اپنا ہے۔ مقامی حکومت کو اپنی ذمہ داریوں کا احساس کر نا ہو گا اور لوگوں کی توقعات پر پور ااترنا ہو گا۔ورنہ آئندہ آنیوالے انتخابات میںنتائج مختلف بھی آ سکتے ہیں۔ ن لیگ کی مقامی قیادت کی عدم دلچسپی کی وجہ سے مقامی حکومت کوکسی خاص اپوزیشن کا سامنا بھی نہیں ہے جس کی وجہ سے بھی ان کی کارکردگی بہتر نہیں ہو پا رہی۔ خیرابھی بھی کچھ نہیں گیا کافی وقت رہتاہے ذرا سی دلچسپی لینے سے حالات کو کسی حد تک سنبھالا جا سکتا ہے۔ تلہ گنگ کی مقامی حکومت ق لیگ کے لئے ٹیسٹ کیس ہے ۔ میونسپل کمیٹی کی کارکردگی سے ق لیگ کی ساکھ بہتر بھی ہو سکتی ہے اور خراب بھی۔ ۔ اﷲ تعالی ہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں اور ہم سب کے حامی وناصر ہوں۔آمین