تلہ گنگ شہر کا امن وامان ابتر ۔۔ڈی پی او چکوال توجہ دیں۔تحریر : شفاعت ملک

تلہ گنگ شہر کا امن وامان ابتر ۔۔ڈی پی او چکوال توجہ دیں۔تحریر : شفاعت ملک

امن و امان کی صورتحال آئے دن بگڑتی جا رہی ہے۔ موٹر سائیکل چوری کی وارداتیں ہوں یا ڈکیتی کی، ان کی تعداد میں اضافہ ہوتا چلا جارہا ہے۔ کچھ عرصہ پہلے تک پولیس کے پاس ایک جوازہوتا تھا کہ ان کے پاس نفری کی کمی ہے مگر اب کسی حد تک اس میں بہتری آچکی ہے۔ آجکل کے دور میںجدید ٹیکنالوجی سے مستفیظ نہ ہو نا ایک مجرمانہ غفلت سمجھی جا سکتی ہے۔ موجودہ دور میں ان اشیاءکی قمیتیں بھی کوئی خاص زیادہ نہیں ہیں۔مجھے اچھے سے یاد ہے جب 1994میں پہلی بار میں نے اپنی پڑھائی کے سلسلے میں کمپیوٹر خریدا تھا تو اسکی قمیت 23ہزار روپے تھی ۔ اس زمانے میں 386کمپیوٹر ہوا کرتے تھے۔ مگر اب دوست ملک چین کی مہربانیوں کی بدولت قمیتیوں میں خاطر خواہ کمی آگئی ہے۔ CCTVکیمروں کی قیمت بھی کوئی خاص نہیں۔ شہر کی تمام اہم جگہوں پر ان کیمروں کو لگایا جا سکتا ہے۔ اور سارا شہر آسانی سےMonitorکیا جا سکتا ہے۔ اگر پولیس کے پاس اتنے وسائل نہیں ہیں تومقامی مخیر خضرات کی مدد حاصل کی جاسکتی ہے ۔ جیسے پچھلے دور حکومت میں مدنی دستر خان، افطار لنگر وغیرہ کی سکیمیں تھیں۔ جس میں خرچہ سارا مقامی مخیر حضرات کاہوتا تھا اور پوسٹرز اور بینرز پر تصاویر میاں برادران کی ہوتی تھیں۔ تلہ گنگ میں مقامی طور پر بھی کئی ایسے تجربہ کار اور پیشہ ورانہ مہارت رکھنے والے لوگ موجود ہیں جو CCTV کا پورا نظام بنا کر دے سکتے ہیں۔تلہ گنگ اتنا بڑا شہر نہیں ہے اس لئے اس کو اس نظام میں لانے کے لئے کوئی بہت بڑی رقم نہیں چاہیئے ہو گی۔پولیس اور مقامی حکومت کو ملکر اس نظام کی منصوبہ بندی کر نی چاہیئے اور پھر مخیر خضرات کو بلا کرایک مفصل Presentationکے ذریعے ان کو آگاہی دیجاسکتی ہے اور ساتھ ساتھ منصوبے پر آنے والی لاگت کا بندوبست بھی کیا جاسکتا ہے۔بس ذرا سی توجہ کی ضرورت ہے ۔ اس سے پولیس اور عوام میں تعاون اور اعتماد کی فضا بھی قائم ہوگی اور عوام میں حکومتی معاملات میں شراکت کا احساس بھی پیدا ہو گا۔ ہمیں بھی اپنی ذمہ داریوں کااحساس کرنا چاہیئے اور حکومتی اداروں کے ساتھ تعاون میں کوئی کسر نہیں چھوڑنی چاہیئے۔ اپنے شہر کوصاف اور پر امن بنانے میں اپنا کردار ادا کرنا ضروری ہے۔ کیونکہ شہر تو آخر اپنا ہے۔ اﷲ تعالی ہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں اور ہم سب کے حامی وناصر ہوں۔آمین