منہ زور ڈرائیور ٹریفک قوانین کی دھجیاں اڑانے لگے ،ٹریفک حکام بے بس ،ضلعی اور تحصیل انتظامیہ کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی۔

منہ زور ڈرائیور ٹریفک قوانین کی دھجیاں اڑانے لگے ،ٹریفک حکام بے بس ،ضلعی اور تحصیل انتظامیہ کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی۔

تلہ گنگ (سروے رپورٹ ) تلہ گنگ شہر بے ہنگم ٹریفک کی لپیٹ میںمسافر وں سے منہ مانگے کرایے وصول کیے جا نے لگے ،ٹریفک کے قوانین کی خوب دھجیاں اڑائی جانے لگیں ،ٹریفک پولیس اہلکار ٹریفک کی روانگی بحال رکھنے میں ناکا م ،منہ زور ڈرائیوروں نے اپنے قانون اپنا لیے ،شہریوں کو مشکلات کا سامنا۔بروز سموار کو ”نئی بات“ میڈ یا گروپ کی ٹیم نے شہر کا دورہ کیا جس میں ٹریفک کے رش نے شہریوں کا چلنا محال کر رکھا تھا اور ہیوی گاڑیاں ،موٹر سائیکل ،کاریں ،بسیں ،رکشے اور ریڑھی بانوں کی بھرمار نے عید پر آ نے والے مسافروں کو عجیب ہی کشمکش میں ڈال رکھا تھا اور ہر کو ئی آ گے نکلنے کیلئے ٹریفک کی قوانین کی خوب دھجیاں اڑایا جا رہا تھا لیکن ٹریفک قوانین پر عملد رآ مد کروانے کے پولیس اہلکار ٹریفک اور پرانا اڈہ کے پاس ایک ایک اہلکار دیکھا ئی دئیے لیکن وہ بھی اپنا حکم چلوانے میں بے بس نظر آ ئے ہیں ۔عید گاہ سے لے کر مندیال چوک پر ٹریفک مکمل جام تھی اور یہ دس منٹ کا سفر 45منٹ میں طے کیا جا رہا ہو نے لگا تھا اور ہر کوئی اپنی ہی من مرضی میں مگن دیکھا ئی دیا۔شہریوں نے بتایا کہ عید کے ایام میںرش کا بھاﺅ بڑھ جا تا ہے لیکن عام دنوں میں بھی شہر میں چلنا دشوار ہو تا ہے حالا نکہ کہی بار متعلقہ اداروں سے میڈیا اور بالمشافہ درخواست بھی کر چکے ہیں لیکن کوئی توجہ دینے میں دلچسپی بھی نہیں لیتا ہر کوئی سرکار کی سیٹ کے مزوں میں مگن ہے ۔مسافروں نے بتایا ہے کہ کرایے عید کے دنوں میں منہ مانگے وصول کیے جا رہے ہیں اور مسافر منہ مانگے کرایے دے کر سفر کر نے پر مجبور ہیں اور سرکاری کرایوں ناموں کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا ہے اور کوئی افسرزاہد کرایے وصول کرنے والے مسافر کوچز کیخلاف کاروائی کرنے کا نا م ہی نہیں لیتا بلکہ اپنی بھی مٹھی گرم کرنے میں مصروف عمل ہیں ۔شہریوں نے ”نئی بات“ میڈ یا گروپ کے ذریعے ضلعی اور تحصیل انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ بے ہنگم ٹریفک اور منہ مانگے کرایے وصول کر نے والوںکیخلاف ایکشن لیں تا کہ ہمیں بھی کوئی ریلیف مل سکے۔