عام انتخابات چار ڈویژن اہم ہو ں گے ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

عام انتخابات چار ڈویژن اہم ہو ں گے ۔۔۔تحریر : شفاعت ملک

پاکستان مسلم لیگ ن کی انتخابی سیاست میں سنٹرل پنجاب کی بنیادی اہمیت ہے ۔ سنٹرل پنجاب کے 4 ڈویژنز جن میں لاہور، گوجرنوالہ، فیصل آباد اور شیخوپورہ شامل ہیں ان میں صوبائی اسمبلی کی 136نشستیں موجود ہیں ۔ جن میں ضلع لاہور 25، ضلع فیصل آباد 22 اور ضلع گوجرنوالہ 14نشستوں کے ساتھ سر فہرست ہیں ۔ ان چار ڈویژنز کی 136 نشستوں میں سے124نشستوں پر مسلم لیگ ن کے
امیدوار وں نے 2013کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی۔جبکہ پی ٹی آئی نے 5، پاکستان مسلم لیگ ق اور آزاد امیدواروں نے تین تین نشستیں حاصل کیں۔ ان چارڈویژنز میں ن لیگ کی کامیابی کی شرح تقریبا 92فیصد رہی۔ صرف گوجرنوالہ ڈویژن کے چھ ضلعوں کی46نشستوں میں سے 45 ن لیگ کے پاس تھیں۔ ن لیگ کی قومی اور صوبائی اسمبلی میں کامیابی کے لئے ان چار ڈویژنز میں ان کی کامیابی اہم کردار ادا کرتی ہے اور ان علاقوں کو ن لیگ کے ادوار میں نوازا بھی خوب جاتا ہے ۔ پنجاب کے باقی 6ڈویژنز میں سے پچاس فیصد سے کم کامیابی بھی ن لیگ کو حکومت بنوا سکتی ہے۔ سنٹرل پنجاب کے ان اضلاع کا کردار نہ صرف صوبائی بلکہ وفاقی حکومت کو بنانے میں بھی اتنا ہی اہم رہاہے۔ تجزیہ نگاروں کے مطابق ن لیگ ان اضلاع کے معاملات پر بہت گہری نظر رکھتی ہے اور ان علاقوں کے قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے اراکین بھی منظور نظر ہوتے ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ ضلع چکوال کی قومی اور صوبائی سیاسی میں اہمیت بہت زیادہ ہے مگر جب اعداد و شمار پر نظر ڈالی جائے تو شاید یہ بات درست نہیں نظر آتی۔ پنجاب میں سب سے کم صوبائی اسمبلی کی نشستیں ضلع چنیوٹ میں ہیں جن کی تعداد 2ہے۔ ضلع حافظ آباد میں 3جبکہ لیہ، بھکر، سرگودہا، خوشاب، میانوالی اور چکوال میں چار چار صوبائی اسمبلی کی نشستیں ہیں۔ ن لیگ نے انتخابات میں کامیابی کے لئے سنٹرل پنجاب کی تمام ایسی سیاسی شخصیات جن میں انتخابات جیتنے کی صلاحیت موجود ہوتی ہے،ان کے لئے اپنی پارٹی کے دروازے ہمیشہ کھلے رکھے ہوئے ہوتے ہیں ۔ پنجاب کے باقی علاقوں میں بھی ان کی یہ ہی پالیسی جاری رہتی ہے۔ یہ تو پچھلے سال تک کی صورتحال تھی۔ مگر اب پلوں کے نیچے سے بہت ساراپانی گذر چکا ہے۔ ن لیگ پورے ملک کی طرح ہمارے ضلع میں بھی توڑ پھوڑ کاشکار ہے۔ ن لیگ میں جو جیتنے کی صلاحیت رکھنے والے اکثر امیداوار ہیں وہ اب کسی اور طرف دیکھ رہے ہیں۔ یہ انتخابات ن لیگ کے لئے ایک بہت بڑا امتحان ہیں۔ اب دیکھنا یہ ہوگا کہ ن لیگ کس طرح سے اپنے امیدواروں کو اپنے ساتھ رکھنے میں کامیاب ہوتی ہے۔ اﷲہم سب کے لئے آسانیاں پیدا کریں اور ہم سب کے حامی و ناصر ہوں۔ آمین