گرمی کی شدت میں اضافہ ،بجلی کی طویل بندش نے شہریوں کی چیخیں نکال دیں ،شہری سراپا احتجاج ۔

گرمی کی شدت میں اضافہ ،بجلی کی طویل بندش نے شہریوں کی چیخیں نکال دیں ،شہری سراپا احتجاج ۔

تلہ گنگ(نما ئندہ بول تلہ گنگ) شدید گرمیاں شروع ہوتے ہی حکومت کے دعوﺅں اور وعدوں کے ڈھول کا پول کھلنے لگا ، تلہ گنگ میں تین سے چار چار گھنٹوں کی لگاتار غیر اعلانیہ لوڈشیدنگ جاری ، غریب عوام راتیں جاگ کر گزارنے پر مجبور ،بجلی ہونے کی صورت میں بھی عوام کو ولٹیج کم ہونے کی وجہ سے پریشانی کا سامنا ۔ شدید گرمیاں شروع ہوتے ہی حکومت کی جانب سے سال 2018میں لوڈشیڈنگ کے مکمل خاتمے کے حکومتی دعوﺅں اور وعدوں کے ڈھول کا پول کھلنے لگا ہے اور تلہ گنگ میں واپڈا کی جانب سے تین سے چار چار گھنٹوں کی لگاتار غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے جس کی وجہ سے طلبہ و طالبات ،مریض سمیت دیگر عوام شدید اذیت سے دوچار ہے ۔لوڈ شیڈنگ سے عوام کو شدید گرمی اورپانی کی کمی کا سامنا ہے جبکہ غریب عوام اس غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے راتیں تک جاگ کر گزارنے پر مجبور ہے ۔اس حوالے سے عوام کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے کیے گئے دعوے اور وعدے جھوٹ تھے یا پھر تلہ گنگ پاکستان میں نہیں جو یہاں اس قدر غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ تلہ گنگ کو ن لیگ کا گڑھ کہنے والوں کو تلہ گنگ کی عوام کی حالت زار پر رحم کرتے ہوئے سب اچھا ہے کی رپورٹ پر اکتفاءکرنے کے بجائے اس غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا فوری نوٹس لینا چاہے، اگراس غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا فوری خاتمہ نہ کیا گیا تو احتجاج کرنے پر مجبور ہوں گے ۔