کھنڈربین الصوبا ئی شاہراہ پنجاب حکومت کے ترقی کے دعوﺅں کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے ،حکمران جماعت خاموش ۔

کھنڈربین الصوبا ئی شاہراہ پنجاب حکومت کے ترقی کے دعوﺅں کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے ،حکمران جماعت خاموش ۔

تلہ گنگ (نما ئندہ بول تلہ گنگ) بین الصوبا ئی شاہراہ کھنڈر بن گئی ،کھنڈرات سے حادثات ہونا معمول بن گئے آ ئے روز قیمتی جانوں کا ضیا ع ہو نے لگا کئی افراد اعضاءسے محروم،پنجاب حکومت کے بلندو بانگ ترقی کے دعوﺅں کی بین الصوبائی شاہراہ نفی کرنے لگی ، بین الصوبائی شاہراہ کو ون وے کیا جا ئے گا ،خادم اعلی پنجاب میاں محمدشہباز شریف توجہ دیں ۔بین الصوبا ئی شاہراہ پر پشاور سے کراچی تک کی ٹریفک روزانہ سینکڑوں ہیوی گاڑیاں گزرتی ہےں اور بلکسر سے میانوالی تک مین شاہراہ کھنڈر بنی ہو ئی ہے اور روڈٹوٹ پھوٹ کی وجہ سے حادثات رکنے کا نام نہیں لیتے جس میں درجنوں قیمتی جانیں ضائع ہو چکی ہیں اور کئی افراد اپنے قیمتی اعضاءبھی کھو چکے ہیں ۔کھنڈر روڈ کی وجہ سے مسافر بھی شدید اذیت کا شکار ہیں ۔حکومت پنجاب کی جانب سے روڈز بنانے کے بلند وبانگ دعوے سنائی دیتے ہیں لیکن بین الصوبا ئی شاہراہ پر نظر پڑتے ہی پنجاب حکومت کے ترقی کے دعوﺅں کی نفی ہو نے لگتی ہے ،مسافر وں نے پنجاب حکومت کی نظروں سے اوجھل بین الصوبا ئی شاہراہ کو لاوارث کہتے ہو ئے بتایا ہے کہ مین شاہراہ پر توجہ نہ دینا پنجاب حکو مت کی نظروں میںمسافروں کی جانوں کی کوئی قدرو قیمت نہیں دیکھتی اور حکمران اپنے ہی اقتدار میں مگن دکھائی دیتے ہیں ۔ بلکسر سے میانوالی تک ٹراما سنٹر کی سہولت نہیں ہے کہ اگر کو ئی ٹریفک حادثہ پیش آ ئے جہاں زخمیوں کو طبی امداد دی جاسکے اور ٹراما سنٹر نہ ہونے کی وجہ سے کئی زخمی اپنی جان کی بازی ہار گئے ہیں اور طبی ماہرین کے مطابق اگر زخمیوں کوبر وقت طبی امداد مل جاتی تو انکی جان بچائی جا سکتی تھی ۔مسافروں کا کہنا ہے کہ خادم اعلی پنجاب میاں محمد شہباز شریف اپنی نظریں بین الصوبا ئی شاہراہ پر ڈالیں جہاں روڈ کی خستہ حالی کی وجہ سے روزانہ قیمتی جانیں کے ضائع ہو رہی ہیں اور بین الصوبا ئی شاہر اہ کو ون وے کر کے مسافروں کی دعائیں لیں۔