پرو ٹوکول نہ ملنے پر ای ڈی او ہیلتھ چکوال بپھر گئے ،میڈ یکل ٹیکنیشن تعینا ت خاتون کا تبا دلہ کر دیا ،اہل علاقہ نے بین الصو با ئی شاہراہ بند کر نے کی دھمکی دے دی۔

پرو ٹوکول نہ ملنے پر ای ڈی او ہیلتھ چکوال بپھر گئے ،میڈ یکل ٹیکنیشن تعینا ت خاتون کا تبا دلہ کر دیا ،اہل علاقہ نے بین الصو با ئی شاہراہ بند کر نے کی دھمکی دے دی۔

چکوال(نما ئندہ بول تلہ گنگ) ای ڈی او ہیلتھ چکوال امجد علی کی جانب سے بی ایچ یو نکہ کہوٹ میں تعینات خاتون میڈیکل ٹیکنیشن کے تبادلہ کے غیر قانونی احکامات کےخلاف اہلیان نکہ کہوٹ نے بین الصوبائی شاہرہ احتجاجا ً بند کرنے کی دھمکی دےدی ۔ ای ڈی او ہیلتھ چکوال امجد علی نے گزشتہ روز بی ایچ یو نکہ کہوٹ کا دورہ کیا جہاں پر ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر اور عملے کے ارکان ایک ایمرجنسی مریض کی زندگی بچانے کی کوششوں میں مصروف تھے جس کی وجہ سے ہسپتال کا عملہ ای ڈی او ہیلتھ کو پروٹوکول نہ دے سکا اور مریض کو ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے میں مصروف رہا۔ جس پر ای ڈی او ہیلتھ امجد علی سیخ پاءہو کر بپھر گئے اور عملے پر خوب غصہ نکالا۔ جس کے بعد ای ڈی او ہیلتھ امجد علی ڈاکٹر کے خلاف تو کچھ نہ کر سکا بوجہ ڈاکٹر پی آر ایس پی کا ملازم ہے۔ البتہ ای ڈی او نے اپنا سارا غصہ اپنی ملازمت کا آخری سال مکمل کرنے والی میڈیکل ٹیکنیشن نور سلطانہ پر نکال دیا اور ان کی ٹرانسفرنکہ کہوٹ سے تھوہا محرم خان کر دی ۔ نور سلطانہ کی سروس کا یہ آخری سال ہے اور قانون کے مطابق سروس کے آخری سال پورا کرنے والے سرکاری ملازمین کی ٹرانسفر نہیں کی جا سکتی ، ای ڈی او ہیلتھ چکوال امجد علی کے اس غیر قانونی اور غیر منصفانہ اقدام پر اہلیان نکہ کہوٹ میں شدیدغم و غصہ پایا جاتا ہے گاﺅں کے لوگوں چوہدری صفدر حسین،مرزا لطیف،ساجد حسین،فخر عباس،طاہر اقبال ،ثاقب محمود،فتح خان،افضل حسین،طارق متین اور ظہیر عباس نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ای ڈی او ہیلتھ کے اس غیر قانونی اور ناجائز فیصلے کو فل الفور واپس نہ لیا گیا تو اہلیان نکہ کہوٹ احتجاج کا حق محفوط رکھتے ہوئے بین الصوبائی روڈ کو احتجاجا بند کر دیںگے-