وفاق المدارس کے ملحقہ مدارس کی تعداد ساڑھے تین سے بڑھ کر ساڑھے بیس ہزار ہوگئی ۔مولانا قاضی عبد الرشید

وفاق المدارس کے ملحقہ مدارس کی تعداد ساڑھے تین سے بڑھ کر ساڑھے بیس ہزار ہوگئی ۔مولانا قاضی عبد الرشید

تلہ گنگ (نما ئندہ بول تلہ گنگ)دینی مدارس اِسلام کی حفاظت گاہ ہیں جن سے دِین و اِیمان کی حفاظت ہوتی ہے وفاق المدارس مدارس کی سب سے بڑی تنظیم ہے جس سے ملحقہ مدارس میں پچیس لاکھ سے زائد طلبہ زیر تعلیم ہیں۔ان خیالات کا وفاق المدارس کے نائب ناظم اعلیٰ مولانا قاضی عبدالرشیدنے جامعہ حسنیہ جھاٹلہ میں آٹھ حفاظ کی دستار بندی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر مولانا محمد عمر عثمانی ،مفتی شاہد عقیل،مولانا نورمحمد آصف ،مولانا عبیدالرحمن انور ،قاری نورمحمد ،مولانا ضیاءالحسنین،قاری زبیراحمد ،مولانا خالد فاروق جرار،قاری محمد یوسف ،قاری عبدالقدوس،اور بزم شیخ الہند ؒ کے علماءاکرام بھی موجود تھے ۔اس موقع پر امین چوکیروی نے نعتیہ کلام پیش کیا ۔مولانا عبیدالرحمن انور نے اس موقع پر فخر جمعیت ڈپٹی چیئرمین سینٹ مولانا عبدالغفور حیدری کے قافلے پر حملے کے خلاف قرار داد مذمت پیش کی ۔ دستار بندی کی تقریب سے وفاق المدارس کے نائب ناظم اعلیٰ مولانا قاضی عبدالرشیدنے مزید کہا کہ وفاق المدارس کے ملحقہ مدارس کی تعداد ساڑھے تین سے بڑھ کر ساڑھے بیس ہزار ہوگئی۔ علماءدیوبند نے ہردور میں جبر واستبداد کے سامنے سینہ سپر ہو کر اسلام اور مسلمانوں کی بقا کے لیے کام کیا علما ءروکھی سوکھی کھا کر دین اسلام کی بقا کے لیے کام کیے۔علماءروکھی سوکھی کھا کر دین اسلام کی بقا کے لیے کام کررہے ہیںاسلام کی ترقی و بقاء، تعلیمات اسلامیہ کی نشر و اشاعت اور قرآن و حدیث کی تبلیغ و تشہیر کے لئے دنیا بھر میں دینی مدارس و مکاتب کی سرگرمیاں جاری ہیں،مزید انہوں نے کہا کہ اسلامی تعلیم کی ساری جدوجہد اور محنت مدارس دینیہ کے ذریعہ کی جاتی ہے یقیناً دینی مدارس دین اسلام کے قلعے ہیں، ان میں حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی میراث تقسیم ہوتی ہے، عقائد اسلام سے باخبر کیا جاتا ہے، اعمال کے مسائل و فضائل سے روشناس کراکے اعمال پر ابھارا جاتا ہے اور تاریخ و ادب اسلامی سے واقف کروایا جاتا ہے۔ لہذا اہل اسلام کی ذمہ داریوں میں سے ایک ذمہ داری یہ بھی ہے کہ وہ ان مدارس دینیہ کی طرف توجہ فرمائیں اور اسلام کی نشر و اشاعت میں ہر طرح سے شریک ہوں۔