رمضان کی آ مد آ مد اشیا ءکی قیمتیں آ سمان تک جا پہنچیں ،مہنگا ئی کا جن حکومت سے بے قابو،انتظامی افسران دفتروں تک محدود ہوکر رہ گئے ۔

رمضان کی آ مد آ مد اشیا ءکی قیمتیں آ سمان تک جا پہنچیں ،مہنگا ئی کا جن حکومت سے بے قابو،انتظامی افسران دفتروں تک محدود ہوکر رہ گئے ۔

تلہ گنگ (نما ئندہ بول تلہ گنگ ) رمضان کی آ مد آ مد اشیا ءکی قیمتیں آ سمان تک جا پہنچیں ،مہنگا ئی کا جن حکومت سے بے قابو عام شہری مشکل سے زندگی بسر کر نے پر مجبور ،شہری سراپا احتجاج ۔تفصیل کے مطابق بجلی کی طویل لوڈشیڈ نگ کے بعد اب شہریوں کو مہنگائی نے بھی لپیٹ میں لے لیا اور اشیا ءکی قیمتیں بازار میں بڑھ گئی ہیں مقامی انتظامی افسران دفتروں تک محدود ہو گئے ہیں ۔حکو مت پنجاب کی جانب سے احکامات سننے کو ملتے ہیں کہ ناجائز منافع خوری کیخلاف کاروائیاں کی جا رہی ہیں لیکن حکومت پنجاب کے احکامات کی تلہ گنگ ولاوہ میں دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں ۔شہریوں نے بتا یا ہے کہ سستے رمضان کے نام پر پنجاب حکومت ہر سال ڈھونگ رچاتی ہے کہ عام آ دمی کو ریلیف ملے گا لیکن اس سے عام آ دمی کو ریلیف نہیں بلکہ سرکاری خزانے کو نقصان ہی اٹھانا پڑ تا ہے ،شہریوں نے خادم اعلی پنجا ب سے اپیل کی ہے کہ سستے بازار کو بند کر کے اسکی جگہ عام استعمال ہو نے والی اشیاءپر سبسڈی دی جا ئے جو آ دمی جہاں سے خریدے تا کہ اسکو حقیقت میں ریلیف مل سکے ۔سستے بازار کے انعقاد سے ایک تو سرکاری دفتروں کا کام مکمل طور پر ٹھپ ہو جاتا ہے اور افسران سستے بازار میں حاضری کو یقینی بناتے ہیں جس سے سائلین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ سستے بازار کو بند کیا جا ئے اسکی جگہ عام استعمال ہو نے والی اشیاءپر سبسڈی دیں اور ناجائز منافع خوری کرنے والوں کیخلاف کا روائی کی جا ئے تا کہ سر کاری ریٹس پر اشیاءہمیں میسر ہو سکیں۔